صلیبی اتحاد ترکی کے خلاف زور پکڑنے لگا

صلیبی اتحاد ترکی کے خلاف زور پکڑنے لگا

ترکی کے خلاف صلیبی اتحاد زور پکڑنے لگا

باغی ٹی وی : ترکی کے خلاف صلیبی اتحاد زور پکڑنے لگا. فرانسیسی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ ترکی کی پالیسیوں کا سامنا کرنے میں قبرص اور یونان دونوں کے موقف کی حمایت کرنے کے لیے یورپی یونین کے ممالک آپس میں متحد ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ترکی کی طرف سے پڑوسی ملکوں میں مداخلت قبول نہیں اور یورپ انقرہ کی یونان اور قبرص میں مداخلت کو قبول نہیں کرے گا۔

قبل ازیں سوموار کو جرمنی کے وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے یورپی پارلیمنٹ کی خارجہ امور کی کمیٹی سے خطاب میں کہا تھا کہ “علاقائی سطح پر ترکی کا طرز عمل ناقابل قبول ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ترکی کے ساتھ اپنی اسٹریٹجک اہمیت کی بنا پر بات چیت جاری رکھنی چاہیئے۔ ترکی پناہ گزینوں کی یورپ کی طرف نقل مکانی کی روک تھام میں کردار ادا کرسکتا اور ہمیں داعش سے الگ کرسکتا ہے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ کوئی بھی قبول نہیں کرتا ہے کہ لیبیا روس اور ترکی کے درمیان تقسیم شدہ مال میں بن جائے۔ ہائیکوماس نے کہا کہ کسی کو بھی لیبیا کو دوسرے شام میں تبدیل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔

ماس کے یہ خیالات ترکی کے ساتھ کشیدہ تعلقات پر تبادلہ خیال کے لیے یورپی یونین کے رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کی برسلز میں ہونے والی میٹنگ کے بعد آئے ہیں۔

یوروپی یونین کے خارجہ تعلقات کے کمشنر جوسیپ بوریل نے کہا کہ یورپی یونین ترکی سے لیبیا میں برلن کانفرنس کے تحت وعدوں کا احترام کرنے پر زور دے رہی ہے۔

بوریل نے انکشاف کیا کہ انہوں نے یورپی وزراء کے ساتھ ترکی کے بارے میں طویل اور دلچسپ مشاورت کی ہے۔ ترکی کو دونوں فریقوں کے مابین بہتر تعلقات کے لیے یورپی اقدار اور مفادات کا احترام کرنا چاہیئے

اپنا تبصرہ بھیجیں