انجمن تاجران نے عید کے حوالے سے اہم اعلان کر دیا

انجمن تاجران نے عید کے حوالے سے اہم اعلان کر دیا

آل پاکستان انجمن تاجران نے عید تک سات دن چوبیس گھنٹے دکانیں کھولنے کا مطالبہ کردیا ۔

آل پاکستان انجمن تاجران کے رہنما نعیم میر کا کہنا تھا کہ حکومت کی غلط حکمت عملی کرونا کو پھیلانے کا سبب بن جائے گی۔عید سے سات روز قبل دکانیں بند کرنے کی تجویز قابل عمل نہیں۔موجودہ دنوں میں رش بے قابو ھوجائے گا۔ جب رش پہلے ہی بڑھ جائے گا تو دکانیں بند کروانا بے مقصد ھوجائے گا۔ تاجر شٹر ڈاؤن کر کے گاہکوں کو اندر بٹھانا شروع کردیں گے۔ اس عمل سے کرونا کے مزید پھیلنے کا خطرہ بڑھ جائے گا۔

نعیم میر کا کہنا تھا کہ حکومت تاجروں اور عوام کے ساتھ دو نمبر یاں بند کرے۔ حکومت کا کام شوشے چھوڑنا نہیں ، مسائل حل کرنا ھونا چاھئے۔حکومت خود ہی روزگار کی دشمن بن جائے تو باقی کیا رہ جاتا ھے۔ عید کے ایام میں کاروبار کے اوقات اور دن بڑھا کر ہی رش پر قابو پایا ھوسکتا ھے۔ عقل و دلیل کی بات حکمرانوں کوسمجھانا مشکل تر ھو چکا ھے۔

نعیم میر کا مزید کہنا تھا کہ کیا حکومت کاروبار بند کروا کے پولیس اور انتظامیہ کی دیہاڑیاں لگوانا چاہتی ھے؟ حکومت بتائے عید پرکاروبار کرنے کے لئے کتنا بھتہ دینا ھوگا ،ھم پہنچا دیتے ہیں۔ تاریخ کی بدترین اور بدعنوان ترین حکومت سے پالا پڑا ھے۔حکومت کی ہر پالیسی میں تاجر دشمنی نظر آتی ھے۔ تاجر حکومت کے ساتھ دو دو ہاتھ کرنے کی تیاری کریں۔ یہ ھکمران لاتوں کے بھوت ہیں ، باتوں سے نہیں مانیں گے۔

نعیم میر کا کہنا تھا کہ تاجروں کو حکومت کے خلاف متحد ھونا ھوگا۔ عید کے بعد ملک گیر تاجر کنونشن بلایا جائے گا۔وسیع تر مشاورت کے بعد حکومت کے خلاف مشترکہ حکمت عملی وضع کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں