انٹرنیشنل کرکٹ کا بڑا نام ، سینکڑوں ون ڈے اور ٹیسٹ کھیلنے والے محمد برادرز چھکے مارنے میں دلچسپی کیوں نہیں رکھتے تھے ؟ بی بی سی کی ایک اسپیشل رپورٹ

انٹرنیشنل کرکٹ کا بڑا نام ، سینکڑوں ون ڈے اور ٹیسٹ کھیلنے والے محمد برادرز چھکے مارنے میں دلچسپی کیوں نہیں رکھتے تھے ؟ بی بی سی کی ایک اسپیشل رپورٹ

لاہور (ویب ڈیسک) کرکٹ کی مشہور فیملی کے چاروں بھائی وزیر محمد، حنیف محمد، مشتاق محمد اور صادق محمد قابل اعتماد بلے بازوں کے طور پر پہچانے جاتے ہیں۔ سب سے بڑے بھائی وزیر محمد اور سب سے چھوٹے بھائی صادق محمد میں یہ قدر مشترک ہے کہ انھوں نے اپنے ٹیسٹ کریئر میں کبھی چھکا نہیں مارا۔” “” “

نامور صحافی عبدالرشید شکور بی بی سی کے لیے اپنی ایک رپورٹ میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔وزیرمحمد نے 20 ٹیسٹ میچوں کی 33 اننگز میں 801 رنز اسکور کیے تاہم صادق محمد ان سے زیادہ کھیلے اور 41 ٹیسٹ میچوں کی 74اننگز میں 2579 رنز اسکور کیے جن میں 5 سنچریاں اور 10 نصف سنچریاں شامل ہیں۔صادق محمد کہتے ہیں ʹمجھے کبھی بھی چھکا مارنے کی خواہش نہیں ہوئی اور نہ ہی میں نے کبھی اس کی کوشش کی۔ میں اپنے کریئر میں ہمیشہ یہ کوشش کرتا تھا کہ وکٹ پر دیر تک کھڑا رہوں اور لمبی اننگز کھیلوںʹ۔صادق محمد سے جب میں نے پوچھا کہ آپ کے ساتھ کھیلنے والے ماجد خان، ظہیرعباس اورآصف اقبال جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے چھکے مارتے تھے تو انہیں دیکھ کر بھی کبھی یہ خیال نہیں آیا کہ میں بھی چھکا مار کر دیکھوں؟ تو صادق محمد نے اپنے مخصوص انداز میں قہقہہ لگاتے ہوئے کہا ʹنہیں۔ میں اپنی بیٹنگ پر توجہ رکھتا تھاʹ۔دلچسپ بات یہ ہے کہ صادق محمد نے اپنے ون ڈے کریئر میں ایک چھکا ضرور مارا ہے جو 1975 کے عالمی کپ میں سری لنکا کے خلاف کریئر بیسٹ 74 رنز کی اننگز میں تھا تاہم صادق محمد کو اب یہ یاد نہیں کہ انھوں نے یہ چھکا کس بولر کی گیند پر مارا تھا۔صادق محمد اور وزیر محمد کے برعکس مشتاق محمد اپنے ٹیسٹ کرئر میں تین چھکے مارنے میں کامیاب رہے۔کرکٹ کی مشہور فیملی کے چاروں بھائی وزیر محمد، حنیف محمد، مشتاق محمد اور صادق محمد قابل اعتماد بلے بازوں کے طور پر پہچانے جاتے ہیں۔لٹل ماسٹر حنیف محمد کے بارے میں کسی شک و شبہ کے بغیر یہ بات کہی جاسکتی ہے کہ ان جیسا انہماک اور توجہ کسی دوسرے بیٹسمین میں نہیں ہوسکتی۔ یہ حنیف محمد ہی تھے جنہوں نے پاکستانی کرکٹ کے ابتدائی برسوں میں پوری ٹیم کا بوجھ اپنے کاندھوں پر اٹھایا ہوا تھا اور ذمہ دارانہ بیٹنگ سے پاکستانی ٹیم کو متعدد بار شکست سے بچانے میں کامیاب رہے۔حنیف محمد نے اپنے ٹیسٹ کریئر میں صرف دو چھکے لگائے۔ پہلا چھکا انھوں نے سنہ 1955 میں بھارت کے خلاف بہاولپور ٹیسٹ میں سنچری کے دوران لگایا۔ یہ حنیف محمد کی پہلی ٹیسٹ سنچری تھی اتفاق سے یہ پاکستان کی سرزمین پر بننے والی بھی پہلی ٹیسٹ سنچری تھی۔حنیف محمدکا دوسرا چھکا سنہ 1965 میں نیوزی لینڈ کے خلاف آکلینڈ ٹیسٹ میں 27 رنز کی اننگز میں شامل تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں