کورونا وائرس کے دنیا سے مکمل طور پر ختم ہونے کے کتنے امکانات ہیں ؟ ماہرین کی رائے سامنے آگئی

کورونا وائرس کے دنیا سے مکمل طور پر ختم ہونے کے کتنے امکانات ہیں ؟ ماہرین کی رائے سامنے آگئی

لندن (ویب ڈیسک) کورونا دنیا بھر میں زور پکڑنے لگا جبکہ عالمی ادارہ صحت نےکہاہےکہ کورونا کا کوئی جادوئی علاج نہیں۔دوسری جانب مشیر وائٹ ہائوس ڈاکٹر فائوچی نےکہاہےکہ امریکا میں وائرس غیر معمولی انداز میں پھیل رہاہے، کوئی گارنٹی نہیں سائنسدان کوروناکیخلاف موثر اور محفوظ ویکسین بناسکیں۔تفصیلات کےمطابق دنیا بھر میں

کورونا کیسز ایک کروڑ 80لاکھ سے تجاوز کرنے اور آسٹریلیا کےدوسرے بڑے شہرمیلبرن میں کرفیو لگنے کے دوران عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیاہےکہ کورونا کیخلاف کوئی سلور بلٹ نہیں آنےوالی، لوگوں کو چاہیے کہ وہ ٹیسٹنگ کروائیں، سماجی فاصلے کا خیال رکھیں اور ماسک پہنیں۔ عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ٹیڈ روس نے کہاہےکہ ہم سب امید کرتے ہیں کہ ہمارے پاس موثر ویکسین موجود ہو جو کہ لوگوں کو وائرس میں مبتلا ہونےسے بچائےتاہم اس وقت کوئی سلور بلٹ نہیں ا ور یقیناً کبھی ہوگی بھی نہیں، دنیا بھر میں کورونا وائرس زور پکڑ رہا ہے اور اب تک اموات کی تعداد 7 لاکھ کے قریب پہنچ گئی ہےجبکہ وائٹ ہائوس کے مشیر نے خبردار کرتے ہوئے کہاہےکہ امریکا میں وائرس غیر معمولی انداز میں پھیل رہاہے، امریکی ڈاکٹر فائو چی نے کہاہےکہ کورونا انتہائی خطرناک وائرس ہے ،اس کےغائب ہونے کا بھی امکان نہیں،ہائوس سب کمیٹی کے سامنے فائوچی کا بیان ٹرمپ کے اس پیغام کی مخالفت کرتا ہے جس میں انہوں نےکہاتھاکہ کورونا وائرس غائب ہوجا ئے گا۔ انہوں نے کہاکہ امریکا بہت زیادہ کیسز ہیں کہ کچھ ریاستوں نے دیر سے لاک ڈائون کیا جبکہ کچھ ریاستوں نے لاک ڈائون ختم کرنے میں جلدی کی۔انہوں نے یہ بھی کہاکہ اس کی کوئی گارنٹی نہیں کہ سائنسدان کورونا کیخلاف کوئی موثر اور محفوظ ویکسین بناسکیں۔دوسری جانب فلپائن کے دارالحکومت منیلا میں بھی دوبارہ لاک ڈائون نافذ کردیاگیا۔یاد رہے کہ دنیا کے اکثر ممالک میں کورونا پر قابو پا لیا گیا ہے جبکہ کچھ ممالک میں یہ خوفناک وائرس ابھی زندہ اور نقصان پھیلا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں