سینئر صحافی آفتاب اقبال کے انکشافات

سینئر صحافی آفتاب اقبال کے انکشافات

لاہور (ویب ڈیسک) سینئر صحافی آفتاب اقبال نے چونکا دینے والے انکشافات کردیئے۔ آفتاب اقبال نے دعویٰ کیا ہے کہ اس وقت دنیا میں دو ہی عناصر ہیں جو پاکستان کو بلیک لسٹ کروانا چاہتے ہیں، ایک مودی سرکار اور دوسرا ہماری اپوزیشن۔۔ یہ ایف اے ٹی ایف بلز انکی حب الوطنی کا امتحان تھا

جس میں وہ بری طرح ناکام ہوئے ہیں۔ آفتاب اقبال نے کہا کہ ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ حکومت اس پر لڈیاں ڈالتی اور لوگوں کو بتاتی کہ یہ ہے ہماری اپوزیشن جس نے ماضی میں ہمیں اس نہج پر پہنچایا لیکن یہ حکومت نالائق ہے جس سے بیانیہ نہیں بنا۔ اس حکومت نے ہر ایشو کو مس ہینڈل کیا ہے، میڈیا سے انہوں نے بناکر نہیں رکھی، ان کے پاس فردوس عاشق اعوان تھی جس کی ٹریجڈی یہ تھی کہ اسے ٹکنے نہیں دیا گیا، ان الیکٹڈ کی یہی ٹریجڈی ہے، فردوس عاشق اعوان کی سیدھی بات کو بھی ٹیڑھی بناکر پیش کیا جاتا۔ آفتاب اقبال کا کہنا تھا کہ اپوزیشن ایف اے ٹی ایف بل منظور کروانے کو تیار ہے لیکن وہ نیب میں 38 تبدیلیاں چاہتی ہے اور جہاں جہاں ہم شکنجے میں پھنسے ہیں ہمیں نکالو۔ عمران خان نے اس پر کہا کہ ہم این آر او نہیں دے رہے یہ ہم سے این آراو پلس مانگ رہے ہیں۔ آفتاب اقبال کا کہنا تھا کہ ہمیں ایف اے ٹی ایف کی شرائط کا بہت فائدہ ہے۔ ہماری 20 ہزار ارب کی اکانومی ان ڈاکومنٹڈ ہے ، اگر یہ ڈاکومنٹڈ ہوجائے تو ہم 1000 ارب کا مزید ٹیکس اکٹھا کرسکتے ہیں۔ یہ لوگ نہیں چاہتے ہیں کہ یہ سارے سیکٹرز مین سٹریم میں آئیں۔ آفتاب اقبال نے خواجہ آصف پر طنز کیا کہ خواجہ آصف کلبھوشن کے معاملے پر تنقید کررہے ہیں جس پر وہ پانچ سال تک نہیں بولے۔ ہم آئی سی جے فیصلے کے تحت قونصلر رسائی دے رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں