لائسنس کیس میں پھنسا کر اور بلا کر نیب نے وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کے ساتھ کیا فاؤل پلے کھیلا ہے ؟ سینئر صحافی کا حیران کن تبصرہ

لائسنس کیس میں پھنسا کر اور بلا کر نیب نے وزیر اعلیٰ عثمان بزدار کے ساتھ کیا فاؤل پلے کھیلا ہے ؟ سینئر صحافی کا حیران کن تبصرہ

لاہور (ویب ڈیسک) ایک دوست نے سوال کیا کہ تم ہر چار چھ کالموں کے بعد سردار عثمان بزدار کے بارے میں کچھ نہ کچھ لکھ مارتے ہو‘ کیا اس سے عثمان بزدار کی صحت پر کوئی اثر پڑنے کی توقع ہے؟ میں نے کہا: سچ پوچھیں تو ہرگز نہیں‘ بالکل بھی نہیں۔

نامور کالم نگار خالد مسعود خان اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔مجھے ذاتی طور پر قطعات کوئی امید نہیں کہ میرے لکھنے کا وزیر اعلیٰ پر یا ان کو بٹھائے رکھنے والوں پر رتی برابر بھی کوئی اثر ہوتا ہو گا لہٰذا ان کے اِدھر اُدھر ہونے کا کوئی فوری امکان کم از کم مجھے تو نظر نہیں آ رہا۔ ”سہاگن وہ جو پیا من بھائے‘‘ لہٰذا جب تک عثمان بزدار کو عمران خان کی آشیرباد حاصل ہے وزارت علیا کا ہما ان کے سر پر بیٹھا رہے گا اور ہم جیسے لکھتے لکھتے بھلے ”پھاوے‘‘ ہو جائیں عثمان بزدار کی وزارت علیا کو قطعاً کوئی خطرہ درپیش نہیں ہے۔ لیکن یہ بات بھی طے ہے کہ وہ بھی اپنی کرسی پر بیٹھے رہیں گے اور ہم بھی لکھتے رہیں گے۔ بقول شاعرع۔۔۔وہ دن بھر کچھ نہیں کرتے ہیں، میں آرام کرتا ہوں۔۔۔وہ اپنا کام کرتے ہیں، میں اپنا کام کرتا ہوں۔۔۔۔شاہ جی سدا سے شرپسند ہیں۔ مجھ سے کہنے لگے: یہ نیب نے تمہارے بزدار صاحب سے کیا کیا ہے؟ میں نے کہا: کرنا کیا ہے؟ فاؤل پلے کیا ہے بلکہ سراسر فائول پلے کیا ہے۔ شاہ جی نے حیران ہوکر پوچھا: فاؤل پلے کیا ہے؟ میں نے کہا: شاہ جی! آپ ایمانداری سے بتائیں کسی کی دکھتی جگہ پر چوٹ مارنا فائول پلے نہیں تواور کیا ہے؟ اب کسی سرکاری ادارے سے یہ توقع کی جا سکتی ہے کہ وہ ایک معزز شخص کی دکھتی رگ دبائے اور کمزور جگہ پر چوٹ مارے۔ شاہ جی کہنے لگے: ایسا کرناتو نہیں چاہیے لیکن میرے دو سوال ہیں‘

پہلا یہ کہ آخر آپ کو بزدار صاحب سے اتنی محبت اور ہمدردی کیوں ہورہی ہے؟ اور دوسرا سوال یہ ہے کہ نیب نے کیا فائول پلے کیا ہے اور عثمان بزدار صاحب کی کون سی دکھتی جگہ پر چوٹ ماری ہے؟ میں نے کہا: شاہ جی پہلے سوال کا جواب تو یہ ہے کہ آخر سردار عثمان بزدار میرے کالج اور یونیورسٹی فیلو ہیں۔ بھلے جونیئر ہیں لیکن وہ جو انگریزی میں کہتے ہیں Alma mater یعنی تعلیمی ادارہ جہاں ہم زیر تعلیم رہے ہوں، وہ تو ایک ہے۔ ہمارا وسیب ایک ہے۔ ہماری محرومیاں ایک تھیں گوکہ اب ایک نہیں رہیں؛ تاہم اتنا کچھ کامن ہوتو دل میں ایک دوسرے کے محبت اور ہمدردی تو پیدا ہوہی جاتی ہے۔ دوسرے سوال کا جواب یہ ہے کہ جب نیب کو پتا ہے کہ اپنے بزدار صاحب کا ہاتھ سوال و جواب کے سلسلے میں تنگ ہے تو پھران کو تنگ کرنے کی غرض سے اڑھائی صفحات پر مشتمل سوالنامہ بھیجنا فائول پلے نہیں تواور کیا ہے؟ آپ کو تو پتا ہے کہ اپنے بزدار صاحب پہلے بھی ایک بار لکھے ہوئے سوالات بھیجنے کے باوجود ان کے جوابات دینے سے انکاری ہو گئے تھے اور طے شدہ انٹرویو پر نہیں آئے تھے اب انہیں پھر سوالات کی لمبی فہرست پکڑانا ناانصافی، ظلم اور فائول پلے نہیں تو اور کیا ہے؟ بھلا شرفا کے ساتھ ایساکیا جاتا ہے؟ شاہ جی یہ بات سن کر مجھ سے متفق ہوگئے۔ ایک عرصے بعد ایسا ہوا ہے کہ شاہ جی اور میں ایک پیج پر ہیں۔یہ تو ایسا ہے کہ جیسے چاند دیکھنے کا معاملہ ہو اور فواد چودھری اور مفتی منیب الرحمن ایک پیج پر ہوں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں