بریکنگ نیوز: اہم ترین شعبے میں امداد اور تعاون کا اعلان ۔۔۔

بریکنگ نیوز: اہم ترین شعبے میں امداد اور تعاون کا اعلان ۔۔۔

اسلام آباد ( ویب ڈیسک ) چین نے ہنرمند مزدور تیارکرنے کے لئے پاکستان بھر میں چھ ووکیشنل ٹرینگ انسٹیٹوٹ کھولنے میں پاکستان کی مدد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس وقت پاکستان میں کام کرنے والی چینی کمپنیوں کو ہنر مند مزدوروں کی شدید قلت کا سامنا ہے کیونکہ مقامی کارکنوں کی اکثریت غیر ہنر مند

زمرے میں آتی ہے۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے گوادر پرو کو بتایا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے تحت چین کی مدد سے صنعتوں کے مطالبات کو پورا کرنے کے لئے ضروری مہارت فراہم کرنے کے لئے ووکیشنل انسٹیٹیوٹ قائم کیے جارہے ہیں۔ یہ اقدام دونوں دوست ممالک کے مابین شراکت کو مزید مضبوط کرے گا۔ پاکستان میں چین کے سفارت خانے کے سیاسی اور پریس سیکشن کے سربراہ باو ڑونگ نے کہا کہ چین پاکستان کو موجودہ ووکیشنل انسٹی ٹیوٹ کو جدید بنانے کے ساتھ ساتھ ہنر مند افرادی قوت تیار کرنے کے لئے کم از کم مزید چھ ایسے اداروں کے قیام کے لئے فنڈز کی فراہمی میں مدد کررہا ہے۔ پاکستان 61 ملین مزدوروں کے ساتھ دنیا کی نویں بڑی مزدور قوت ہے جس میں سے 5.9 فیصد بے روزگار ہیں۔ تقریبا 25 لاکھ افراد مقامی سطح پر نوکریاں حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں جکہ ان کی بڑی تعداد ضروری مہارتوں کے فقدان کی وجہ سے مقامی صنعتوں کی ضرورت کو پورا نہیں کر سکتی حالانکہ پاکستان میں سالانہ صرف 445000 ہنرمند مزدور پیدا کرنے کی گنجائش ہے۔ حکام نے توقع کی ہے کہ چین کی مدد سے مزید چھ و وکیشنل انسٹی ٹیوٹ کو شامل کرنے سے پاکستان مقامی اور بین الاقوامی مارکیٹ میں ہنر مند مزدور پیدا کرنے کے قابل ہو جائے گا۔ پاکستان اور چین توقع کر رہے ہیںکہ 2030 تک ہنر مند افرادی قوت کے لیے لاکھوں ملازمتیں پیدا ہوں گی۔ ستمبر 2020 تک سی پیک کے تحت مختلف منصوبوں میں 70000 کے قریب پاکستانی براہ راست ملازمتیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ،سی پیک سنٹر آف ایکسی لینس کی حالیہ تحقیق کے مطابق بالواسطہ طور پر سی پیک اپنے موجودہ منصوبوں کے تحت 2030 تک 1.2 ملین ملازمتیں پیدا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ جولائی 2020 میں چین نے نیشنل ووکیشنل اینڈ ٹیکنیکل ٹریننگ کمیشن کے توسط سے پاکستان کے آس پاس کے پیشہ ورانہ تربیتی اداروں / اسکولوں کے لئے تقریبا 650 ملین روپے مالیت کا تربیتی سامان فراہم کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں