بریکنگ نیوز: بھارت تنہا ہونے لگا ، بنگلہ دیش نے اپنے سب سے بڑے پشت پناہ انڈیا کو کمر توڑ جھٹکا دے دیا

بریکنگ نیوز: بھارت تنہا ہونے لگا ، بنگلہ دیش نے اپنے سب سے بڑے پشت پناہ انڈیا کو کمر توڑ جھٹکا دے دیا

کراچی(ویب ڈیسک) بنگلہ دیش کے بھارت سے تعلقات کمزور،چین سے مضبوط ہورہے ہیں لیکن حکومت دونوں ایشیائی ملکوں سے ہی تعلقات کی بہتری کی خواہاں ہے۔ بنگلہ دیش کے شمال مشرقی حصے میں ایک شہر سلہت ہے،بنگلہ دیش نے یہاں ایک ائیر پورٹ بنانے کیلئے 250 ملین ڈالرز کی بولی کا اعلان کیا

جو بھارت ہار گیا لیکن یہی بولی بیجنگ کا ایک کنسٹرکشن گروپ جیت گیا۔دوسری جانب بنگلہ دیش کو چین نے برآمدات پر 97 فیصد ڈیوٹی فری رسائی بھی دیدی۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق بھارت اور چین کے درمیان سرحد پر کشیدگی عروج پر ہے۔ اسی درمیان بھارت کی پارلیمان میں ایک تحریری بیان کے بعد وفاق کی مودی حکومت پر حزب اختلاف نے شدید تنقید شروع کر دی ہے۔کانگریس پارٹی کا کہنا ہے کہ ایک جانب لداخ میں سرحد پر چین کے ساتھ جھڑپ میں بھارتی فوجیوں کی اموات ہو رہی تھیں، تو دوسری جانب وفاقی حکومت ʼچینی بینک سے قرض لے رہی تھے۔بحث کا آغاز بھارت کی ریاست ہماچل پردیش کے وزیر خزانہ انوراگ ٹھاکُر کے ایک تحریری بیان کے بعد ہوا۔بی جے پی کے دو اراکین پارلیمان نے سوال کیا تھا کہ کورونا وائرس کی وبا کے سبب پیدا ہونے والے حالات سے نمٹنے کے لیے وفاق نے فنڈز کا استعمال کیسے کیا اور اسے ریاستوں تک کیسے بھیجا۔اس سوال پر انوراگ ٹھاکر کی جانب سے پارلیمان کو دی جانے والی معلومات میں یہ بات سامنے آئی کہ وفاقی حکومت نے چین میں واقع ایشین انفراسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک یعنی ’اے آئی آئی بی‘ سے کورونا وائرس کے آغاز سے اب تک دو بار قرض لیا ہے۔انوراگ ٹھاکر نے کہا کہ ʼکووڈ 19 کے بحرانسے نمٹنے کے لیے بھارتی حکومت نے ایشین انفراسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک سے قرض کے دو معاہدے کیے۔ پہلا قرض 8 مئی 2020 کو 50 کروڑ ڈالر کا لیا گیا۔ یہ قرض انڈیا میں کووڈ 19 سے نمٹنے کے ایمرجنسی حل اور صحت کے منصوبے کے لیے لیا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں