بریکنگ نیوز: امریکہ کا وائٹ ہاؤس بھی محفوظ نہ رہا، ایسی چیز برآمد کہ سیکیورٹی اداروں کی دوڑیں لگ گئیں

بریکنگ نیوز: امریکہ کا وائٹ ہاؤس بھی محفوظ نہ رہا، ایسی چیز برآمد کہ سیکیورٹی اداروں کی دوڑیں لگ گئیں

واشنگٹن (ویب ڈیسک) نامعلوم شخص کی جانب سے ریکن نامی مہلک پوائزن وائٹ ہاؤس بھیجے جانے کا انکشاف۔ وائٹ ہاؤس کو ارسال کیے جانے والے پیکیج میں موجود پوائزن سے امریکی صدر کو نشانہ بنانا مقصود تھا، تاہم اس ہفتے کے شروع میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بروقت کارروائی سے حالات

قابو میں رہے۔تفصیلات کے مطابق امریکی صدر کو مہلک پوائزن کے ذریعے نشانہ بنانے کا انکشاف ہوا ہے۔امریکی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق وائٹ ہاؤس کے نام ارسال کیے جانے والے ایک پیکیج میں زہر کی موجودگی ظاہر ہوئی ہے جو کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ تک پہنچنے والا تھا۔ خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایف بی آئی اور خفیہ ادارے واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ سی این این نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے دو نامعلوم عہدیداروں کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ پیکیج میں سے ملنے والے مواد کے ابھی تک دو ٹیسٹ کیے جا چکے ہیں جس یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ اس میں ریکن نامی زہر موجود ہے۔واضح رہے کہ امریکی صدر پر اس نوعیت کے اٹیک پہلے بھی ہو چکے ہیں۔ خبر ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق یہ یہ پہلا موقع نہیں کہ جب صدر ٹرمپ کو ریکن نامی جان لیوا پوائزن سے نشانہ بنایا گیا ہے، بلکہ اس سے قبل 2018ء میں بھی صدر ٹرمپ اور اعلیٰ فوجی عہدیداروں کو پینٹاگون میں پوائزن آلود خطوط بھیجے گئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں