شکر الحمد للہ: کورونا کو بائے بائے کہنے کا وقت قریب ۔۔۔۔۔ ملک کے طول عرض سے بالآخر اچھی خبر آگئی

کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان میں اسمارٹ لاک ڈاؤن کے نتائج مسلسل سامنے آرہے ہیں اور کورونا وائرس کے کیسز میں کمی کا رجحان برقرار ہے جبکہ اموات کی عالمی درجہ بندی میں پاکستان سے متعلق بہتری آئی ہے اور 12ویں نمبر پر آگیا ہے ۔ تاہم ملک میں کورونا سے مزید 79؍ افراد جاں بحق ہوگئے

جس کے بعد اموات کی مجموعی تعداد 5033؍ ہوگئی جبکہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 242787تک پہنچ گئی۔سندھ میں کورونا کیسز ایک لاکھ سے تجاوز کرگئے ، وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ میں کورونا نے مزید 40؍ افراد کی جانیں لے لیں اور 1538؍ افراد متاثر ہوئے اور 1254؍ مریض صحت یاب ہوکر معمول کی زندگی میں واپس آگئے ، ابتک 543400؍ ٹیسٹ کئے جاچکے ہیں جن میں پورے سندھ میں 100900؍ مریضوں کی تشخیص مثبت آئی ہے۔ جمعرات کو ملک بھر سے کورونا کے مزید 3058 کیسز اور 79 اموات سامنے آئی ہیں جن میں سندھ سے 1538کیسز اور 40؍ اموات، پنجاب سے 988؍ کیسز 26اموات ، خیبر پختونخوا سے 354 کیسز اور 9 اموات ، بلوچستان سے 47کیسز ایک انتقال ، اسلام آباد 81 کیسز 2اموات ، آزاد کشمیر 40 کیسز اور گلگت بلتستان سے 10کیسز اور ایک انتقال کی خبر آئی ہے ۔ پنجاب میں 1955 ، سندھ میں 1677 اور خیبر پختونخوا میں 1063 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جب کہ اسلام آباد میں 142 ، بلوچستان میں 125 ، آزاد کشمیر میں 40 اور گلگت بلتستان میں 31 افراد کا انتقال ہوا ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وفاقی زیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ اگست کے آخری ہفتے میں بین الصوبائی اجلاس میں کورونا صورتحال کا جائزہ لیں گے۔ اگرکورونا کی صورتحال بہتر ہوئی تو اسکول کورونا ایس او پیز کے تحت کھول دیے جائیں گے۔ نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے شفقت محمود کا کہنا تھا کہ آن لائن کلاسز صرف ایک مخصوص طبقے تک محدود ہیں۔انہوں نے کہا کہ دیہی علاقوں میں آن لائن کلاسز میں مشکلات ہیں، دور دراز علاقوں میں انٹرنیٹ کا مسئلہ بھی درپیش ہے، جس سے تعلیم کا حرج ہورہا ہے۔شفقت محمود کا مزید کہنا تھا کہ بچوں کا بہت نقصان ہوگیا، پرائیوٹ اسکولز کا برا حال ہے، فاقوں کی نوبت آگئی ہے، ہائر ایجوکیشن کمیشن کی تجویز ہے کہ عید کے بعد جن علاقوں میں انٹرنیٹ نہیں ہے، وہاں کے طلبا کو ہاسٹلز میں لایا جائے گا۔واضح رہے کہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر برائے تعلیم شفقت محمود نے کہا تھا کہ عالمگیر وبا کورونا کے باعث بند تعلیمی ادارے 15 ستمبر سے کھل جائیں گے۔اس سے قبل وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس ہوئی تھی جس میں ستمبر کے پہلے ہفتے میں ایس او پیز کے ساتھ تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں