بریکنگ نیوز: بہت کرلی دو نمبری۔!! صوبہ پنجاب کی 2بڑی شوگر ملوں کے مالکان کے گرد گھیرا تنگ، وارنٹ گرفتاری جاری

بریکنگ نیوز: بہت کرلی دو نمبری۔!! صوبہ پنجاب کی 2بڑی شوگر ملوں کے مالکان کے گرد گھیرا تنگ، وارنٹ گرفتاری جاری

ملتان (ویب ڈیسک) نجی ٹی وی نیوز چینل کے ذرائع کے مطابق کین کمیشن پنجاب کی نادہندہ شوگر ملوں کے خلاف بڑی کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ پنجاب کی دو بڑی شوگر ملوں کے مالکان کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دئیے گئے ہیں۔ عبداللہ شگر مل اوکاڑہ کے مالک میاں الیاس کے

وارنٹ گرفتاری جاری کئے گئے، عبداللہ شوگر مل لینڈ ریونیو کی مد میں 29 کروڑ روپے سے زائد کی نا دہندہ ہے۔ شکر گنج شوگر مل جھنگ کے مالک علی الطاف سلیم کے بھی وارنٹ گرفتاری جاری کر دئیے گئے۔ شگر گنج شوگر مل 10 کروڑ 57 لاکھ روپے سے زائد کی نادہندہ ہے۔ کین کمشنر پنجاب نے ڈپٹی کمشنر اوکاڑہ اور جھنگ کو کارروائی کی ہدایت کر دی۔ دوسری جانب پنجاب حکومت نے شوگرفیکٹریز کنٹرول ترمیمی آرڈیننس 2020جاری کردیا، آرڈیننس کے ذریعے پنجاب شوگرفیکٹریز کنٹرول ایکٹ 1950میں بنیادی تبدیلیاں کی گئی ہیں۔ شوگرفیکٹریز کنٹرول ترمیمی آرڈیننس 2020 کے مطابق گنے کے کاشتکاروں کے واجبات ادائیگی میں تاخیر پر سزا اور جرمانے ہوسکیں گے، وزن اور ادائیگی میں غیرقانونی کٹوتی پر3سال قید اور 50لاکھ جرمانہ بھی ہوسکے گا، شوگرمل گنے کی وصولی کی باضابطہ رسید جاری کرنے کی پابند ہوگی۔ گنے کے واجبات کاشتکار کے اکاؤنٹ میں بھیجے جائیں گے۔ کنڈہ جات پر شوگر مل کے ایجنٹ مل کی باضابطہ رسیدجاری کرنے کے پابند ہوں گے، شوگرملز کی جانب سے کسانوں کو کچی رسید جاری کرنا جرم ہوگا۔ آرڈیننس کے مطابق کین کمشنر کو کاشتکاروں کے واجبات کا تعین اور وصولی کا اختیار دیا گیا ہے، واجبات کی وصولی بذریعہ لینڈ ریونیو ایکٹ کی جاسکے گی، کاشتکاروں کے واجبات ادا نہ کرنے پر مل مالک گرفتار ہوگا اور مل کی قرقی کی جاسکے گی، ڈپٹی کمشنرز بطورایڈیشنل کین کمشنرگرفتاری اور قرقی کے احکامات پر عمل کے پابند ہوں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں