بڑے نقصانات کی اطلاعات

بڑے نقصانات کی اطلاعات

یوریون (ویب ڈیسک )آرمینیا اور آذر بائیجان کی فوجوں کے درمیان ” نگور نو کارا باخ “ کے مسئلے پر فوجی جھڑپیں شروع ہو گئیں ہیں جس کے باعث دونوں ممالک کے باعث علاقے کی صورتحال کشیدہ ہو گئی ہے جبکہ روس نے بھی فوری لڑائی بندی کی اپیل کر دی ہے ۔
تفصیلات کے مطابق ایسوسی ایٹڈ پریس کا اپنی رپورٹ میں کہنا ہے کہ آرمینیا نے آذر بائیجان کے دو ہیلی کاپٹرز کو مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے اور وزارت دفاع کے ترجمان کا کہناتھا کہ آذربائیجان کے تین ٹینکوں کو بھی نشانہ بنا یا گیاہے لیکن فی الحال جانی نقصانات کے حوالے سے کوئی تصدیق موصول نہیں ہوئی ہے۔ آرمینیا نے الزام عائد کیاہے کہ آذر بائیجان کی جانب سے اٹیک اور گولہ باری کی گئی ۔ آرمینیا نے صورتحال سے نمٹنے کیلئے فوری طور پر مارشل لاءکا اعلان کر دیاہے اور اپنی تمام فوجییں سرحد پر تعینات کرنے کیلئے تیاریاں تیز کر دی ہیں ۔ اس صورتحال کے پیش نظر روس نے فوری طور پر مداخلت کرتے ہوئے آرمینیا اور آذر بائیجان سے لڑائی بندی کرنے کی اپیل کی ہے ۔آرمینیا اور آذر بائیجان دونوں ہی 1991 سے قبل سویت یونین کا حصہ تھے تاہم دونوں ممالک کے درمیان تین دہائیوں سے زائد عرصہ سے نگور نو کاراباخ کا تنازع ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایسوسی ایٹڈ پریس کا اپنی رپورٹ میں کہنا ہے کہ آرمینیا نے آذر بائیجان کے دو ہیلی کاپٹرز کو مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے اور وزارت دفاع کے ترجمان کا کہناتھا کہ آذربائیجان کے تین ٹینکوں کو بھی نشانہ بنا یا گیاہے لیکن فی الحال جانی نقصانات کے حوالے سے کوئی تصدیق موصول نہیں ہوئی ہے۔ آرمینیا نے الزام عائد کیاہے کہ آذر بائیجان کی جانب سے اٹیک اور گولہ باری کی گئی ۔ آرمینیا نے صورتحال سے نمٹنے کیلئے فوری طور پر مارشل لاءکا اعلان کر دیاہے اور اپنی تمام فوجییں سرحد پر تعینات کرنے کیلئے تیاریاں تیز کر دی ہیں ۔ اس صورتحال کے پیش نظر روس نے فوری طور پر مداخلت کرتے ہوئے آرمینیا اور آذر بائیجان سے لڑائی بندی کرنے کی اپیل کی ہے ۔آرمینیا اور آذر بائیجان دونوں ہی 1991 سے قبل سویت یونین کا حصہ تھے تاہم دونوں ممالک کے درمیان تین دہائیوں سے زائد عرصہ سے نگور نو کاراباخ کا تنازع ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں