متاثرہ خاتون کن شرائط پر پولیس کو بیان دینے پر رضامند ہو گئی ؟ تازہ ترین خبر

متاثرہ خاتون کن شرائط پر پولیس کو بیان دینے پر رضامند ہو گئی ؟ تازہ ترین خبر

لاہور(ویب ڈیسک) لاہور رنگ روڈ بد اخلاقی کیس میں 20 روز بعد اہم پیش رفت، پولیس متاثرہ خاتون کو بیان دینے پر راضی کرنے میں کامیاب ہوگئی۔پولیس ذرائع کے مطابق متاثرہ خاتون ابتدائی بیان بذریعہ ٹیلی فون دے گی، متاثرہ خاتون کا 161 کا ابتدائی بیان کا ٹرانسکرپٹ چالان کیساتھ لف ہوگا۔

ذرائع کے مطابق پولیس عدالت سے ان کیمرہ ٹرائل کی درخواست کرے گی، دوران ٹرائل متاثرہ خاتون کا فرضی نام استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔متاثرہ خاتون نے ملزم شفقت علی کی شناخت کرنے پر بھی رضا مندی ظاہر کر دی ہے۔ 20 روز بعد مرکزی ملزم عابد ملہی اب بھی پولیس کی پہنچ سے دور ہے اینٹی ٹیررازم کی عدالت نے لاہور سیالکوٹ موٹر وے پر دوران لوٹ مار خاتون سے غلط حرکت کے مقدمہ کے ملزم شفقت کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کرتے ہوئے ملزم شفقت کی شناخت پریڈ کے لئے پولیس کومزید مہلت دیتے ہوئے سماعت 6 اکتوبر تک ملتوی کردی۔عدالت نے تفتیشی افسر کو جلد از جلد ملزم کی شناخت پریڈ کروانے اورآئندہ سماعت سے قبل ملزم شفقت کی شناخت پریڈ کو یقینی بنانے کا حکم بھی دیاہے،اینٹی ٹیررازم کورٹ کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کیس کی سماعت کی، کیس کی سماعت شروع ہوئی تودوران سماعت تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ ملزم شفقت علی عرف بگا کی شناخت پریڈ کرانا ممکن نہیں ہوسکا، تفتیشی افسر نے عدالت کوبتایا کہ ملزم کا ڈی این اے ابتدائی طور پر متاثرہ خاتون سے میچ کرگیا ہے، ملزم شفقت کی نشاندہی پر مرکزی ملزم عابد کو گرفتار کرنا باقی ہے اورملزم سے ہتھیار و ڈنڈا برآمد کرنا بھی باقی ہے۔ عدالت سے استدعا ہے کہ ملزم کی شناخت پریڈ کے لئے مہلت دی جائے، عدالت نے تفتیشی افسر اور پراسکیوشن کی استدعا پر ملزم کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی،ملزم کو تھانہ گجرپورہ پولیس نے ضابطہ فوجداری کی تحت 376 اور 392 کی دفعات کے ساتھ اینٹی ٹیررازم ایکٹ 1997 کی دفعہ 7 کے تحت درج مقدمہ میں گرفتار کررکھاہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں