بریکنگ نیوز۔۔ شریف خاندان کی مشکلات میں اچانک اضافہ ۔۔۔ حکومت نے اچانک بجلی گرا دی

بریکنگ نیوز۔۔ شریف خاندان کی مشکلات میں اچانک اضافہ ۔۔۔ حکومت نے اچانک بجلی گرا دی

اسلام آباد (ویب ڈیسک )منی لانڈرنگ کیس میں شریف خاندان کے تین اراکین سمیت دس افراد کا نام ای سی ایل میں شامل کر دیا گیاہے ۔نجی ٹی وی چینل کے مطابق منی لانڈرنگ کیس میں شہبازشریف کی اہلیہ نصرت شہباز، بیٹی رابعہ عمران اور جویریہ علی کے نام ایگزیٹ کنٹرول لسٹ

میں ڈالنے کی منظوری وفاقی کابینہ نے دی ہے ۔خاندان کے ساتھ بینکنگ ٹرانزیکشنز کرنے والے سات افراد بھی باہر نہیں جا سکیں گے ،کابینہ نے سرکولیشن سمری کے ذریعے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی منظوری دی ۔نیب نے دس افراد کے نام ای سی ایل میں شامل کرنے کی سفارش کی تھی ، کابینہ کی منظوری کے بعد وزارت داخلہ نے نام ای سی ایل میں ڈال دیئے گئے۔ای سی ایل میں ڈالنے جانے والے افراد میں نثار احمد، علی احمد خان، ظاہر نقوی ،قاسم قیوم،راشد کرامت ، فضل داد عباسی اورشعیب قمر کے نام نام شامل ہیں ۔واضح رہے کہ منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانت کی میعاد ختم ہونے پر نیب نے صدر مسلم لیگ (ن) شہباز شریف کو کمرہ عدالت سے گرفتار کیا جس کے بعد احتساب عدالت نے انہیں 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا تھا۔ نیب لاہور کا کہنا ہے کہ شہباز شریف نے متعدد بے نامی اکاؤنٹس سے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کی، تحقیقات کے مطابق شہباز شریف نے اپنے فرنٹ مین، ملازمین اور منی چینجرز کے ذریعے اربوں روپے کے اثاثے بنائے۔نیب لاہور کا مزید کہنا ہے کہ 1990 میں شہباز شریف کے اثاثوں کی مالیت 21 لاکھ تھی تاہم 1998 میں ان کے اور ان کی اولاد کے اثاثوں کی مالیت ایک کروڑ 8 لاکھ ہوگئی، شہباز شریف اور ان کے صاحبزادوں نے 2008 سے 2018 تک 9 کاروباری یونٹس قائم کیے، شہباز شریف کے خلاف اسٹیٹ بینک کے فنانشل مانیٹرنگ یونٹ کی جانب سے شکایت موصول ہونے پر انکوائری شروع کی۔ دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق قومی احتساب بیورو (نیب) نے قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی جانب سے جلاوطنی کے دوران لندن میں خریدے گئے فلیٹس کی تفصیلات جاری کر دیں۔نیب کی جانب سے جاری کردہ دستاویز کے مطابق شہباز شریف نے جلا وطنی کے دوران برطانیہ میں 13 لاکھ 31 ہزار 7 پاؤنڈز میں 4 فلیٹس خریدے اور انہوں نے کاروباری شخصیت، بارکلے بینک، بھتیجی عاصمہ ڈار سمیت دیگر سے قرض لیا۔احتساب بیورو کی جانب سے جاری کردہ دستاویز کے مطابق لندن میں فلیٹ2005 میں 2 لاکھ 35 ہزار پاوَنڈ میں خریدا گیا، فلیٹ کےلیے 75 ہزار پاؤنڈ کاروباری شخصیت اور ایک لاکھ 60 ہزار بارکلے بینک سے قرض لیا گیا۔دستاویز کے مطابق 2007 میں دوسرا فلیٹ لندن میں ایک لاکھ 60 ہزار پاؤنڈ میں خریدا گیا، فلیٹ کے لیے 16 ہزار 75 پاونڈ کاروباری شخصیت اور ایک لاکھ 43 ہزار پاوَنڈ بارکلے بینک سے قرض لیا گیا۔نیب دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ 2007 میں تیسرا فلیٹ 6 لاکھ 50 ہزار پاوَنڈ میں خریدا گیا جس کے لیے کاروباری شخصیت سے 40 ہزار پاوَنڈ اور بارکلے بینک سے 5 لاکھ 47 ہزار 114 پاوَنڈ قرض لیا گیا۔ شہباز شریف نے جلاوطنی کے دوران 2009 میں لندن میں چوتھا فلیٹ 2 لاکھ 86 ہزارپائونڈ میں خریدا جس کے لیے کے لیے کاروباری شخصیت نے 2 لاکھ 30 ہزار 607 پاوئونڈ قرض دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں