خان صاحب : حالات کچھ بھی ہوں ، دنیا کچھ بھی کہے ، آپ ہمیشہ یقین رکھنا کہ ۔۔۔۔ نازک ترین حالات میں چینی صدر کا وزیراعظم عمران خان کے نام خصوصی پیغام

خان صاحب : حالات کچھ بھی ہوں ، دنیا کچھ بھی کہے ، آپ ہمیشہ یقین رکھنا کہ ۔۔۔۔ نازک ترین حالات میں چینی صدر کا وزیراعظم عمران خان کے نام خصوصی پیغام

بیجنگ( ویب ڈیسک) پاکستان کے دیرینہ دوست چین کے صدر شی جن پنگ نے وزیراعظم عمران خان کو لکھے گئے اپنے خط میں اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ دنیا کے حالات جیسے بھی ہوں دونوں ملکوں کی دوستی قائم رہے گی۔صدر شی جن پنگ نے اپنے خط میں وزیراعظم عمران خان

کو سالگرہ کی مبارکباد دیتے ہوئے اپنی نیک خواہشات کا بھی اظہار کیا۔ انہوں نے پاک چین دوستی کو مزید مضبوط کرنے کے عزم کا بھی اعادہ کیا۔چینی صدر کا کہنا تھا کہ ہماری پاکستان کیساتھ دوستی مثالی ہے۔ دونوں ممالک کے تعلقات ہر آزمائش پر پورا اترے۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان کی فوج دنیا کی بہترین فوج تب ہوگی جب آئین کی پاسداری کرے گی۔اپنی زیر صدارت پارٹی کے ارکان قومی و صوبائی اسمبلیوں اور سینیٹرز کے ایک مشترکہ اجلاس سے خطاب میں سابق وزیر اعظم نے کہا:’ہماری فوج کا بڑا حصہ آئین کی پاسداری کرتا ہے، صرف چند لوگ جنھیں انگلیوں پر گنا جا سکتا ہے باقی فوج کو بھی بدنام کرتے ہیں۔‘نواز شریف نے کہا کہ جو آئین کی عزت نہیں کرتا اور اس سے باہر نکلتا ہے وہ اس کی کوئی عزت نہیں کرتے۔ ’باقی فوج کے لیے بھی بدنامی کا باعث یہ لوگ بنتے ہیں جو ہمیں منظور نہیں ہیں۔‘ان کے مطابق ‘مجھے فوج کے چھوٹے اور بڑے تمام افسران عزیز ہیں لیکن وہ افسر مجھے پسند نہیں جو دھاندلی کرتے ہیں، جو الیکشن میں دھاندلی کرتے ہیں، جو ووٹ ایک بکسے سے نکال کر دوسرے بکسے میں ڈلواتے ہیں۔’اجلاس سے خطاب میں نواز شریف نے کہا کہ ‘آپ لوگ جیتے ہوئے تھے آپ کو ہرایا گیا ہے۔ آر ٹی ایس بند کر کے آپ کو ہرایا گیا، آپ کے پولنگ ایجنٹس کو باہر نکال دیا گیا۔نواز شریف نے کہا کہ وہ عمران خان کے سلیکٹرز سے بھی پوچھنا چاہتے ہیں کہ کیوں اس کو عوام کے سر پر لا کر سوار کر دیا ہے۔سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ’آپ نے بہت بڑی آئین شکنی ہے آپ نے، یہ ناقابل معافی جرم ہے۔ آپ نے پاکستان کے مینڈیٹ کو چوری کیا ہے، بکسے چوری کر کے دوسروں کو جتوا دیا گیا، اتنی بڑی دھاندلی کی ہے۔‘نواز شریف نے کہا کہ اس سب کے باوجود قبائلی اراکین، ایم کیو ایم اور چھوٹی جماعتوں کو ملا کو اور اتنے بڑے پیمانے پر دھاندلی کرنے کے بعد صرف چار ووٹوں سے عمران خان کو وزیراعظم بنوایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں