کرکٹ میں امپائر کے ساتھ میچ فکسنگ کے لیے مشہور عمران خان کا طریقہ واردات کیا ہے ؟ سینئر پاکستانی سیاستدان کا انوکھا انکشاف

کرکٹ میں امپائر کے ساتھ میچ فکسنگ کے لیے مشہور عمران خان کا طریقہ واردات کیا ہے ؟ سینئر پاکستانی سیاستدان کا انوکھا انکشاف

لاہور(ویب ڈیسک)جمعیت علماء اسلام ف کے مرکزی رہنما حافظ حسین احمد نے وزیراعظم عمران خان کے بارے میں کھلاڑیوں کی زبان میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ کرکٹ میں ایمپائر کے ساتھ ”میچ فکسنگ“ کے عالمی شہرت یافتہ نے سیاسی سیریز میں بھی اسی ”طریقہ واردات“ کو اپنا رکھا ہے، دراصل عمرانی یوٹرن ان کی

سیاسی ”بال ٹمپرنگ“ ہے ۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ حسین احمد نے کہا کہ 126دن کے ”عمرانی پلس قادری“ دھرنے میں ایمپائر کی ”انگلی“ کا تو بار بار کروٹ بدل، بدل کر اعتراف کیا گیا، بلکہ ”انگلی“ اٹھانے کے لیے بھی ایمپائر کوملاقات کرکے آمادہ کرنے کی ناکام کوشش بھی کی گئی،وزیراعظم عمران خان نے سیاست میں بھی کھلاڑیوں جیسا وہی طرز عمل اپنایا ہے،انصافی وکلاء کے خطاب میں نہ صرف ایمپائر کو ساتھ ملانے بلکہ مخالف ٹیم کے خلاف بال ٹمپرنگ اور ”فاؤل گیم“ کی بھی دھمکی دی گئی اور ماشاء اللہ ایمپائر نے بھی اپنوں کے جھرمٹ میں ”پی ڈی ایم الیون“ کے مقابلے میں ”عمرانی الیون“ کے ساتھ دینے کا اعلان ”ڈنکے کی چوٹ پر کردیا“ہے۔انہوں نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ شاہد ہے کہ گوجرانوالہ جہاں سے 16اکتوبر کو احتجاجی سیریز کا آغاز ہوگا ،وہاں کی ”سیاسی پچ“ پی ڈی ایم الیون کے لیے ماضی کی طرح کارآمد ہے، جب اس وقت کے ایمپائر کو بھی میچ کا فیصلہ ہمارے حق میں کرنا پڑا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ایمپائر کے قریب ”عمرانی الیون“ کا پنڈی میں آج کے ”نیٹ پریکٹس“سے واضح ہوگیا کہ ایمپائر کی مداخلت اور تعاون نے اُن کو کچھ زیادہ آرام پسند اور کاہل بنادیا ہے، اس لیے وہ گوجرانوالہ سے شروع ہونے والی سیریز کے تماشا ئیوں کو کبھی ”کرونا“ سے اور کبھی پکڑ دھکڑ کے جیلوں میں ڈالنے سے ڈرارہے ہیں اس کے ساتھ ساتھ ہر بڑاہٹ میں گوجرانوالہ سے اپوزیشن کے کگائے گئے بینرز کو بھی اتارا جا رہا ہے۔ لیکن ان کی الٹی گنتی 16اکتوبر سے شروع ہورہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں