ایپل کے نئے آئی فون 12 کی وہ خصوصیات جو کسی اور فون میں نہیں ؟ بی بی سی کی ایک خصوصی رپورٹ

ایپل کے نئے آئی فون 12 کی وہ خصوصیات جو کسی اور فون میں نہیں ؟ بی بی سی کی ایک خصوصی رپورٹ

لندن (ویب ڈیسک) امریکی ٹیکنالوجی کمپنی ایپل نے قدرے تاخیر کے بعد اپنے مشہورِ زمانہ موبائل فون کا نیا ماڈل آئی فون 12 کے نام سے متعارف کروا دیا ہے اور یہ کمپنی کے پہلے فون ہیں جو فائیو جی ٹیکنالوجی پر کام کریں گے۔ایپل نے آئی فون 12 کے چار ماڈل متعارف کروائے ہیں

بی بی سی کی ایک خصوصی رپورٹ کے مطابق ۔۔۔۔۔۔۔جن میں ایک کم قیمت اور چھوٹے سائز والا ’آئی فون منی‘ بھی شامل ہے۔ ایپل نے نئے ماڈلز کی ظاہری وضع قطع میں بھی کچھ تبدیلیاں کی ہیں۔موبائل فون کی عالمی مارکیٹ پر نظر رکھنے والے ماہرین اور تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ رواں برس ایپل کے پاس 2014 کے بعد اپنی فروخت بڑھانے کا سب سے بڑا موقع ہے جس کی بڑی وجہ نئے ماڈلز کا فائیو جی فون ہونا ہے۔ویڈ بش سکیورٹیز کے تجزیہ کار ڈین آئیوز کا کہنا ہے کہ اس وقت دنیا میں جو 95 کروڑ آئی فون زیرِ استعمال ہیں ان میں سے 40 فیصد کم از کم گذشتہ تین برس کے عرصے میں اپ گریڈ نہیں کیے گئے اور یوں یہ کمپنی کے لیے ایک بڑا موقع ہے۔ایپل نے چیف ایگزیکٹو ٹم کک نے تعارفی تقریب میں بات کرتے ہوئے کہا کہ فائیو جی ڈاؤن لوڈ اور اپ لوڈ کے معاملات میں کارکردگی کا ایک نیا معیار دے گا، ویڈیو کی سٹریمنگ بہتر معیار کی ہو گی جبکہ گیمنگ کے شعبے میں بھی کارکردگی پہلے سے کہیں بہتر محسوس ہو گی۔آئیے دیکھتے ہیں کہ ایپل کے اس نئے فون میں نیا کیا ہے اور اسے خریدنے کے لیے آپ کو کتنی رقم خرچ کرنی پڑے گی۔ایپل نے آئی فون 12 کے جو چار ماڈل متعارف کروائے ہیں ان میں آئی فون 12، آئی فون 12 منی، آئی فون 12 پرو اور آئی فون 12 پرو میکس شامل ہیں۔ان چار ماڈلز میں سب سے کم قیمت آئی فون 12 منی ہے اور 5.4 انچ سکرین والے اس فون کی قیمت 699 ڈالر رکھی گئی ہے جبکہ 6.1 انچ والا آئی فون 12، 799 ڈالر میں دستیاب ہو گا۔

آئی فون 12 کے دیگر دو ماڈل زیادہ قیمت کے ہیں اور آئی فون 12 پرو 999 ڈالر جبکہ پرو میکس 1099 ڈالر میں دستیاب ہو گا۔ آئی فون پرو کا ڈسپلے 5.8 انچ سے بڑھا کر 6.1 انچ کر دیا گیا ہے جبکہ پرو میکس کا ڈسپلے اب 6.7 انچ کا ہو گا جو ایپل کے کسی بھی فون کا سب سے بڑا ڈسپلے ہے۔ایپل کے مطابق آئی فون 12 پانچ رنگوں، سیاہ، سفید، سرخ، سبز اور نیلے رنگ میں دستیاب ہو گا جبکہ یہ آئی فون 11 سے حجم اور وزن میں کم ہو گا۔کمپنی کے مطابق آئی فون 12 اور 12 پرو 23 اکتوبر سے دکانوں پر دستیاب ہو گا جبکہ آئی فون 12 منی اور 12 پرو میکس بازار میں 13 نومبر سے فروخت کے لیے پیش کیے جائیں گے۔ایپل کا کہنا ہے کہ نئے ورژن کے آئی فونز میں جدید ترین چپ اے 14 بایونک چپ لگی ہوئی ہے جسے فائیو نینو میٹر پروسیس پر تیار کیا گیا ہے۔اس فون میں استعمال کیے گئے ’فائیو نینو میٹر پروسیس‘ سے مراد اس حقیقت کی طرف اشارہ ہے کہ چپ کے ٹرانسسٹرز کا حجم مزید کم کر دیا گیا ہے۔فون کی تقریب رونمائی میں بتایا گیا اس چِپ کی وجہ سے فون کے صارفین اب پہلے کی نسبت کم بیٹری کا استعمال کرتے ہوئے 4K ویڈیو میں ترمیم کرنے کے علاوہ تصاویر کی ریزولوشن بڑھانے اور گرافکس سے بھرپور ویڈیو گیمز بہتر طریقے سے بغیر کسی رکاوٹ کے کھیل سکیں گے۔ایپل کا کہنا ہے کہ آئی فون 12 کا ڈسپلے اب ایل سی ڈی کی جگہ او ایل ای ڈی ہو گا

جس سے نہ صرف بہتر رنگ دستیاب ہوں گے جبکہ اس سے فون کے حجم میں بھی 11 فیصد کی کمی لانا ممکن ہوئی ہے۔کمپنی کے مطابق جہاں نئے آئی فونز کی سکرین کی ریزولیوشن بہتر ہے وہیں ان میں ایک ’سیرامک شیلڈ‘ بھی استعمال کی گئی ہے تاکہ گرنے کی صورت میں اس کا چار گنا بہتر بچاؤ ممکن ہو سکے۔آئی فون 12 اور 12 منی میں دو عقبی کیمرے دیے گئے ہیں جن میں وائیڈ اور الٹرا وائیڈ عدسے موجود ہیں جبکہ آئی فون 12 پرو اور 12 میکس میں ان کے علاوہ ٹیلیفوٹو لینس بھی دیا گیا ہے۔کمپنی کے مطابق آئی فون 12 پرو اور پرو میکس میں لیڈار (لائٹ ڈٹیکشن اینڈ رینجنگ) سکینر بھی موجود ہے۔ ایپل کا کہنا ہے کہ یہ سکینر تصویر میں نظر آنے والے منظر کی وسعت کو باریکی سے پیش کرتا ہے۔ اور کم روشنی میں بھی چھ گنا تیزی سے بہتر آٹو فوکس کی سہولت دیتا ہے۔کمپنی نے آئی فون پرو میکس کے عقبی وائیڈ اینگل کیمرا لینس کو بھی بڑا سینسر دیا ہے تاکہ کم روشنی میں بھی اس کی کارکردگی معیاری ہو۔ایپل کے مطابق اس فون سے اب نائٹ موڈ سیلفیز بغیر فلیش استعمال کیے کھینچی جا سکیں گی۔جہاں ایپل نے اپنے نئے فونز میں بہت سی چیزیں شامل کی ہیں وہیں اس مرتبہ جب آپ نئے فون کا ڈبا کھولیں گے تو اس میں نہ تو چارجر ہو گا اور نہ ہی ہیڈ فونز۔یہ پہلا موقع ہے کہ ایپل نے اپنے فونز کے ساتھ یہ دونوں چیزیں شامل نہیں کی ہیں اور کمپنی کا کہنا ہے کہ اس اقدام کی وجہ ماحولیات پر برے اثرات کم کرنا ہے۔ان نئے ماڈلز کی چارجنگ کے لیے فون کے عقبی حصے میں ایک مقناطیسی چِپ نصب کی گئی ہے جو مطابقت رکھنے والے چارجرز سے جڑ کر فون کو چارج کرے گی۔ کمپنی کے مطابق اس طریقے سے فون زیادہ جلدی چارج بھی ہو گا۔نئے آئی فونز کے علاوہ ایپل نے منگل کو اپنے سمارٹ سپیکر کا نیا ورژن بھی متعارف کروایا ہے جس کا نام ہوم پوڈ منی رکھا گیا ہے۔کمپنی کا کہنا ہے کہ اس کا یہ سپیکر ایپل کے علاوہ بہت سی دیگر کمپنیوں کے آلات اور خدمات کے ساتھ بھی مطابقت رکھتا ہے۔آواز سے کنٹرول ہونے والی یہ ڈیوائس قریب موجود آئی فون کی شناخت کر کے اس سے جڑ سکتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں