یہ سعودی بچہ ملک کا کم عمر ترین باپ بن گیا

یہ سعودی بچہ ملک کا کم عمر ترین باپ بن گیا

کم عمر میں شادی کرنے کا رواج بہت ہی کم علاقوں میں رہ چکا ہے۔ سعودی عرب کا کم عمر ترین دولہا پہلی اولاد کا باپ بن گیا ، خوشی سے جھومتے علی القیسی نے اولاد کو اللہ کی رحمت اور خصوصی تحفہ قرار دیا۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کی رپورٹ کے مطابق سعودی شہر تبوک سے تعلق رکھنے والے علی القیسی کی عمر 16سال ہے اور اس کی شادی ڈیڑھ سال قبل ہوئی جب وہ آٹھویں جماعت کا طالب علم تھے ۔

علی القیسی کی شادی اپنے چچا کی15سالہ بیٹی سے ہوئی جس پر سعودی عرب میں کافی تنقید ہوئی تھی تاہم کچھ لوگوں نے اس کی حوصلہ افزائی بھی کی تھی ۔ بیٹے کی پیدائش پر القیسی اور اس کے والدین بہت خوش ہیں۔کم عمر ترین والد بننے پر علی القیسی کا کہنا ہے کہ وہ خدا کا شکر گزار ہے کہ اس نے عظیم نعمت اولاد سے نوازا، اپنی خوشی الفاظ میں بیان نہیں کرسکتا۔اسلام میں حکم دیا گیا ہے کہ بچے بالغ ہو جائے تو اس کے جلد از جلد شادی کرنی چاہیے۔ کیونکہ وقت پر شادی کرنے کے بہت سے فوائد ہیں۔ ایک تو یہ ہے کہ وہ بہت سے گناہوں سے بچ جاتا ہے۔ اور دوسری سب سے بڑی بات یہ ہے کہ وقت پر بچے پیدا ہونے کے ساتھ آپ کے بچے وقت پر جوان ہو جاتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں