نوازشریف کے بیانیئے سے50 فیصد ن لیگی پریشان ، کتنے (ن)لیگی ارکان پارٹی کو خیر آباد کہنے والے ہیں ؟ بڑا دعویٰ کر دیا گیا

نوازشریف کے بیانیئے سے50 فیصد ن لیگی پریشان ، کتنے (ن)لیگی ارکان پارٹی کو خیر آباد کہنے والے ہیں ؟ بڑا دعویٰ کر دیا گیا

لاہور(ویب ڈیسک) سینئر صحافی عارف حمید بھٹی نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے 50 فیصد لوگ نوازشریف اور مریم نواز کے بیانیئے کی وجہ سے ناراض ہیں۔ ان کو ذرا سی آزادی ملی یہ اڑ جائیں گے۔ وہ توبدقسمتی ہے کہ حکومت ڈلیور نہیں کرپارہی ہے۔ ن لیگ کے جو تیس سال سے حمایتی


ہیں وہ بھی بیانیئے سے ناراض ہیں۔ میرے پاس مسلم لیگ ن کے تین رکن اسمبلی آئے ان کا کہنا تھا کہ بیانیئے نے ہمیں کہیں کا نہیں چھوڑا۔رانا مشہود لاہور کے جلسے کو انتظامات کے کنونیئر ہیں، لاہور کے ارکان اسمبلی کا کہنا ہے کہ ہم نے ان کے ساتھ کام نہیں کرنا۔یہ کہتے ہیں کہ نوازشریف کے بیانیئے ووٹ کو عزت دو، آئین کے تحت عدالتیں بنیں، آئین کے تحت تین بار وزیراعظم کا حلف اٹھایا لیکن انہی عدالتوں کے فیصلوں کو نظر انداز کرتے ہیں، عدالتیں بلا رہی ہیں لیکن واپس نہیں آرہے، نوازشریف تینوں بار ووٹ سے نہیں آئے ، جب ان کو ووٹ کے بغیر نہیں آنے دیا گیا تو وہ بول پڑے کہ دوسرے کو کیوں لایا گیا۔یاد رہے عارف حمید بھٹی نے چند روز قبل بھی کہا تھا کہ مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کے بیانیئے سے اختلاف کرنے والے سینئر رہنماؤں کی تعداد 8 سے زیادہ ہوگئی ہے۔ ان کا نجی ٹی وی کے پروگرام میں کہنا تھا کہ میری پرسوں ن لیگ کے ایک وزیر سے بات ہوئی ہے۔ آج سہیل وڑائچ سے بھی میرے ایک دوست کی بات ہوئی ہے۔ نوازشریف کے بیانیئے سے اختلاف کرنے والے سینئر رہنماؤں کی تعداد 8 سے زیادہ ہوگئی ہے۔ان میں خواجہ آصف، خرم دستگیر، رانا تنویر، ایازصادق، خواجہ سعد رفیق بھی شامل ہیں، یہ میں نہیں سہیل وڑائچ کہہ رہے ہیں۔ خرم دستگیر نے ایک بندے کو کہا کہ میاں نوازشریف رشتے داری میں مجھے مروائیں گے۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ لاہور کے جلسے کا انتظام مجھے نہیں کسی اور کے ذمے لگائیں۔ خواجہ سعد رفیق کئی بار جیل گیا، قید ہوا، خواجہ آصف پر بھی سختیاں ہوئی ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ نوازشریف کو دو غیرمنتخب لوگ گمراہ کررہے اور اداروں کیخلاف اکسا رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں