الیکشن کمیشن نے این اے75 کے انتخابی نتائج رو ک دیئے

الیکشن کمیشن نے این اے75 کے انتخابی نتائج رو ک دیئے

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ اور ریٹرننگ افسرکواین اے 75 سیالکوٹ ضمنی انتخابات کے نتائج سے روک دیا ،الیکشن کمیشن نےڈسٹرکٹ ریٹرننگ اور ریٹرننگ افسر کو معاملے کی مکمل انکوائری کا حکم دیدیا۔تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں این اے 75 سیالکوٹ کے ضمنی انتخابات کے حوالے سے مشاورتی اجلاس منعقد ہوا جس میں مسلم لیگ(ن) کی امیدوار نوشین افتخار کی درخواست پر غور کیا گیا ۔اجلاس کے بعد الیکشن کمیشن نےاعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ حلقے میں نتائم غیرضروری تاخیر کے ساتھ موصول ہوئے،
 بیس پولنگ اسٹیشنوں کے نتائج میں ردوبدل کا شبہ ہے ،چیف سیکریٹری کے ساتھ ایک دفعہ رات 3 بجے رابطہ ممکن ہوا،چیف سیکریٹری نے گمشدہ آفیسرز اور پولنگ بیگز کوٹریس کرکے نتائج کی فراہمی کی یقین دہانی کرائی۔اعلامیے کے مطابق ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر تفصیلی رپورٹ ارسال کررہا ہے،انکوائری رپورٹ کے بعد الیکشن کمیشن نتائج جاری کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کرے گا۔الیکشن کمیشن کی جانب سے ہدایت کی گئی ہے کہ انکوائری کے بغیر این اے 75 کا فیصلہ جاری نہ کی جائے اورریٹرننگ افسر نتیجہ روک دیں ۔اعلامیے کے مطابق چیف الیکشن کمشنر نے آئی جی،کمشنروڈپٹی کمشنر سے رابطے کی کوشش کی جواب نہ ملااورپریزائیڈنگ آفیسر کے ساتھ رابطے کی کوشش کی لیکن ناکامی ہوئی،الیکشن کمیشن نے مکمل انکوائری اور ذمہ داران کے تعین کےلیے ہدایات جاری کردی ہیں۔قبل ازیں مسلم لیگ ن کی این اے 75 سے امیدوارنوشین افتخار نے چیف الیکشن کمشنر کو درخواست دی، جس میں انہوں نے موقف اپنایا کہ انتخابات میں 23 پولنگ سٹیشنوں کا عملہ انتخابی نتائج سمیت غائب ہے، اب تک 335 سٹیشنوں کے نتائج مرتب کئے گئے ہیں، ریٹرننگ افسر نے پریذائیڈنگ افسران اور عملے کی بازیابی پر بے بسی کا اظہار کیا۔نوشین افتخار نے درخواست میں کہا کہ مسنگ نتائج کے حوالے سے شکوک شبہات پائے جاتے ہیں، متعلقہ پولنگ سٹیشنوں کے نتائج معطل کر کے فرانزک آڈٹ کروایا جائے، الیکشن کمیشن کی طرف سے صورتحال کے جائزے تک نتیجہ روک دیا جائے، مذکورہ 23 پولنگ سٹیشنوں، ڈسکہ سٹی کے 36 پولنگ سٹیشنوں میں دوبارہ انتخابات کروائے جائیں۔واضح رہے کہ ن لیگ کے افتخار الحسن عرف ظاہرے شاہ کے انتقال سے خالی ہونیوالی نشست این اے 75 ڈسکہ پر رات ساڑھے چار بجے تک زبر دست مقابلہ چل رہا تھا، 337 پولنگ سٹیشنوں کے نتائج میں ن لیگ کی نوشین افتخار کے 97588 جبکہ پی ٹی آئی کے علی اسجد ملہی کے 94541 ووٹ تھے، 23 پولنگ سٹیشنز کے نتائج آنا باقی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں